ضیغم اہلسنت کا روحانی تبلیغی ورود مسعود کراچی

in Tahaffuz, April 2014

ہم دے رہے ہیں پیغام رضا جو چاہے ہمارے ساتھ چلے
ہم روک رہے ہیں باطل کو جو چاہے ہمارے ساتھ چلے
متعدد علماء واحباب اہلسنت کے مسلسل پرخلوص اصرار پیہم پرضیغم اہلسنت علمبردار مسک اعلیٰ حضرت خلیفہ خحلفائے اعلیٰ حضرت رئیس التحریر والتقریر مولانا محمد حسن علی رضوی بریلوی میلسی 21 فروری بروز جمعہ ایئر انڈس فلائٹ کی پرواز سے 5 بجے بعد دوپہر کراچی رونق افروز ہوئے۔ کراچی ایئرپورٹ پر علامہ مفتی سید محمد اکبر الحق قادری رضوی خطیب جامع مسجد الجیلانیہ ملیر کی قیادت میں ملیر ٹائون کراچی جماعت اہلسنت ومدارس اہلسنت کے کارکنوں نے استقبال کیا اور کاشانہ الجیلانیہ لے گئے جہاں پر بکثرت علماء و احباب، شرف زیارت ملاقات کے لئے آتے رہے۔ بعد نماز عشاء مولانا حافظ محمد اسلم کے دولت کدہ پر دعوت میں شرکت اور دعا فرمائی۔ 9 بجے شب فیصل ٹائون کی وسیع و عریض پرشکوہ جامع مسجد کوثر میں حضرت مولانا سید راشد علی صاحب قادری کی دعوت پر ڈیڑھ گھنٹہ تک عید میلاد و گیارہویں شریف و عظمت و فضیلت سیدنا غوث اعظم و سرکار اعلیٰ حضرت قدس سرہما پر خصوصی خطاب فرمایا۔ اجلاس میں مختلف علاقوں کے علماء کثیر تعداد میں موجود تھے۔
مولانا علامہ سید راشد علی قادری حضڑت علامہ احمد قادری خطیب جامع مسجد فاروقی فیصل کالونی 3 کی خواہش پر سلسلہ عالیہ قادریہ برکاتیہ رضویہ و سلسلہ چشتیہ صابریہ میں اجازت و خلافت عطا فرماکر دستار بندی فرمائی اور بکثرت علماء واحباب سلسلہ عالیہ میں بیعت ہوئے۔
22فروری علامہ مفتی سید محمد اکبر الحق شاہ صاحب قادری رضوی کے دولت کدہ کاشانہ الجیلانیہ پر بکثرت علماء احباب ملاقات کے لئے آتے رہے۔ بعد نماز عصر و مغرب ملیر ٹائون کی جامع مسجد فردوس میں امام و خطیب حضرت مولانا احسان اعظمی صاحب کی دعوت پر عظیم الشان اجلاس سے خطاب فرمایا۔ عقائد و معمولات و مسلک اعلیٰ حضرت بڑے دلنشین انداز میں بیان فرمایا اور لوگ سلسلہ عالیہ قادریہ برکاتیہ رضویہ میں داخل ہوئے۔
23 فروری کو نبیرۂ شیر بیشۂ اہلسنت مظہر اعلیٰ حضرت مولانا محمد رضا عرف تحسین رضا قادری رضوی حشمتی کی دعوت پر پیر طریقت برادر زادہ شیر بیشۂ اہل سنت مولانا قطمیر رضا خاں حشمی رضوی کے مدرسہ حشمت الرضا کورنگی 2 تشریف لے گئے اور اپنی دختر کے غھر گئے۔
23 فروری کو کورنگی 4 کی مرکزی جامع مسجد محمدی کے عظیم الشان اجلاس درس قرآن مجید میں ڈیرھ گھنٹہ سے زائد عظمت شان رسالت کرامات سیدنا غوث اعظم وفضائل اعلیٰ حضرت اور ردبد مذہبیت پر کیف و سرور سے بھرپور بیان فرمایا اور متعدد علماء کرام کی خواہش پر اجازت و خلافت عطا فرمائی اور حاضرین کی بڑی تعداد سلسلہ عالیہ برکاتیہ رضویہ میں داخچل ہوئے۔ واپسی ملیر میں محب اہلسنت جناب زاہد بھائی کے گھر تشریف لے گئے۔ محفل دعا میں شرکت فرمائی ہر جگہ علماء کا جم غفیر موجود تھا۔
بعد نماز عشاء ملیر کی جامع مسجد قادریہ کے عظیم الشان جلسہ عام سے خطاب فرمایا اور مذہب حق اہلسنت و مسلک اعلیٰ حضرت کی حقانیت اور سرکار غوث اعظم پر پرسوز بیان فرمایا اس اجلاس میں کراچی کے مختلف علاقوں اور مختلف مدارس و مختلف اداروں کے علماء بکثرت موجود تھے۔ ضیغم اہلسنت نے خطیب جامع مسجد قادریہ حضرت علامہ مولانا مفتی ڈاکٹر محمد عبدالوہاب صاب کی فرمائش پر سلسلہ عالیہ قادریہ برکاتیہ رضویہ چشتیہ صابریہ کی اجزت و خلافت عطا فرما کر دستار بندی فرمائی اور کثیر التعداد علماء و احباب سلسلہ رضویہ برکاتیہ میں داخل ہوئے۔ سلام و قیام دعا پر اختتام ہوا۔ مذکورہ بالا جملہ تقاریب میں یہ بات خاص طور پر قابل ذکر ہے کہ یہاں دہلی، میرٹھ، بریلی شریف، مراد آباد، احمد آباد، میرٹھ، الہ آباد، آگرہ، حیدرآباد، دکن، بمبئی، اجمیر شریف، جانو گڑھ، لکھنؤ پیلی بھیت وغیرہ مقامات سے آئے ہوئے پرانے بزرگ حضرت ضیغم اہلسنت مولانا علامہ محمد حسن علی رضوی میلسی کو بہت محبت اور بڑی عقیدت سے ملتے رہے اور حضرت ممدوح کے اسلوب سخن خاص بریلی شریف کی زبان اور مارہرہ شریف کے اسلوب سخن اور بیان و کلام حسن و خطابت سے بہت متاثر و محظوظ ہوئے اور اپنے اپنے گھر میں دعوت و دعا کے لئے لے جاتے رہے۔ (محمد کامران رضوی)
24 فروری دن میں جونا گڑھ صاحب مولانا بلال محمد یسٰین صاحب کے گھر پر معین آباد ملیر میں ایک پرتکلف دعوت ظہرانہ میں شرکت فرمائی۔ یہاں علامہ مفتی ڈاکٹر محمد عبدالوہاب قادری کے علاوہ پرانے بزرگ ملاقات کے لئے موجودتھے۔
24 فروری نماز مغرب کے وقت ملک التحریر حضرت علامہ رئیس القلم مولانا ارشد القادری الرضوی امجدی رحمتہ اﷲ علیہ کے ایک مخلص جان نثار مرید صادق جناب منیر ارشد رضوی نے دعوت و دعا پر مدعو کیا۔ حضرت علامہ ارشد القادری رحمتہ اﷲ علیہ یہاں قیام فرماتے تھے۔ یہاں گیارہویں شریف کی نیاز پر فاتحہ شریف پڑھا اور دعائے خیر فرمائی اور موئے مبارک شریف سرکار دوعالم نور مجسم جان کرم جان رحمتﷺ کی زیارت کرائی۔ علامہ مفتی سید محمد اکبر الحق شاہ صاحب کے علاوہ متعدد علماء ساتھ موجود تھے۔
مسجد نور جمعیت اشاعت اہل سنت کا عظیم الشان جلسہ یادگار ہے۔ جمعیت اشاعت اہلسنت کے زیر اہتمام اہلسنت حامیان مسلک اعلیٰ حضرت کا منفرد شان کا حامل سرگرم ادارہ ہے ہے جو گہرے رضوی قادری رنگ میں رنگا ہوا ہے۔ حضرت علامہ مولانا محمد عرفان رضوی ضیائی اﷲ عمرہ حضور سیدنا قطب مدینہ شیخ العرب والعجم سیدی ضیاء الدین احمد قادری رضوی مدنی علیہ الرحمہ کے بافیض مرید صادق ہیں جو مسجد مدرسہ اور اشاعتی ادارہ کی قیادت و انصرام کا فریضہ سرانجام دے رہے ہیں۔ مسجد نور کے عظیم الشان جلسہ میں کثیر تعداد میں علماء و احباب اور سرگرم سنی کارکن موجود تھے جس سے ضیغم اہلسنت مدظلہ العالیٰ کا ذوق دوبالا ہوا۔ یہاں بھی حضرت مولانا الحاج محمد عرفان رضوی ضیاء کی زیرصدارت ڈیڑھ گھنٹہ تک کیف و سرور سے بھرا وعظ فرمایا۔ جس میں رفعت شان نبوی، عظمت و کرامات سیدنا غوث اعظم سرکار اعلیٰ حضرت کے علمی روحانی جاہ و جلال عشق و محبت مصطفےﷺ پر پرمغز خطاب فرمایا اور دارالعلوم کے بالائی کتب درس نظامی کے طلباء کو ایک حدیث شریف کا مختصر درس دیا اور خصوصی دعا فرمائی۔ حضرت مولانا مفتی سید اکبر الحق شاہ صاحب رضوی نے تعارفی خطاب فرمایا۔
25 فروری صبح حضرت مولانا حمد صاحب قادری رضوی حشتمی کے دولت کدہ فیصل کالونی 3 میں حضرت صمصام المناظرین رئیس التحریر علامہ میلسی صاحب ناشتہ کی دعوت پر حشمتی منزل تشریف لے گئے۔ علامہ مفتی اکبر الحق شاہ صاحب اور علامہ مولانا سید راشد علی قادری، مولانا سید ریاض اشرفی ہمراہ تھے۔ چند علماء کرام کو اجازت و خلافت سے سرفراز فرامایا اور دعائے خیر پر واپسی ہوئے۔ یہاں سے نجم علی خاں اور پھر بریلی کالونی میں بریلی شریف کے مہاجرین کے تشریف لے گئے۔ یہاں بریلی شریف کے اہل محبت کا مجمع تھا۔ اﷲ تعالیٰ کی نعمتوں سے دستر خوان سجا ہوا تھا۔ اہل بریلی حضرت ضیغم اہلسنت سے اور حضرت ممدوح اہل بریلی سے نیاز مندانہ محبت و عقیدت سے ملے اور دعائے خیر فرماکر واپس ہوئے۔
اسی دوران جناب مولانا ندیم صاحب قادری نبیرۂ حضرت رئیس الشعرائ، جناب سیماب اکبر آباد دعوت پر ان کے دولت کدہ پر تشریف لے گئے یہاں بھی ممتاز علماء و مخلصین اہل محبت کا عظیم اجتماع تھا ، طعام کا بہت ہی اعلیٰ انتظام تھا۔ عوام وخواص ضیغم اہلسنت دامت برکاتہم کے ارشادات و فرمودات سے بہت متاثر ہوئے۔ حضرت سیماب اکبر آبادی علیہ الرحمہ ممتاز نعت گو ادیب و شاعر تھے اکبر آباد آگرہ سے متصل باذوق لوگوں کا شہر اور حضرت سیماب علیہ الرحمہ ہی کا یہ شعر ہے۔
خراب فرد عمل ہو نہ جائے اے سیماب
ایسے جناب رسالت مآب دیکھیں گے
سر راہچلتے چلتے جناب سید محترم و معظم مولانا سید ریاض اشرفی اور مدرسین و طلاب کی فرمائش پر جامعہ غوثیہ اسلامیہ فیصل کالونی 2 کا دورہ فرمایا اور مدرسین و اساتذہ کرام نے محبت بھرا استقبال فرمایا۔ صمصام المناظرین ضیغم اہلسنت نے اپنے ملفوظات سے مستفیذ فرمایا دعا اور ہدایات سے نوازا، بعض اساتذہ کو سلسلہ عالیہ کی اجازت سے مشرف فرمایا۔ حضرت ممدوح طلباء و اساتذہ ڈسپلن اور معیار تعلیم سے بہت متاثر ہوئے۔ یہاں بھی معمر بزرگ کمال درجہ محبت و عقیدت سے پیش آئے۔
بعد نماز ظہر حضرت مولانا محمد الطاف قادری رضوی اور علامہ لائق محمد سعیدی رضوی اور اپنے قدیمی عزیزان مخلصین محبین کی دعوت پر دارالعلوم انوار القادریہ رضویہ جمشید روڈ حیدرآباد کالونی رونق افروز ہوئے۔ طلباء و مدرسین و اساتذہ کرام نے مثالی استقبال کیا۔ حضرت رئیس التحریر ضیغم اہلسنت نے عظمت شان رسالت عقائد اہلسنت اور رد ارتعداد و استیصال بد مذہبیت و حقانیت مسلک اعلیٰ حضرت پر ایک گھنٹہ خطاب فرمایا۔ سلام قیام دعا خیر پر اختتام ہوا۔ حضرت مولانا محمد الطاف قادری رضوی نے اپنی رہائش گاہ پر پرتکلف دعوت طعام کا انتظام فرمایا ہوا تھا۔ دا کے بعد واپسی ہوئی۔ پھر متعدد علماء کی فرمائش پر ان کی مساجد و مدارس اہلسنت میں دعائے خیر کے لئے تشریف لے گئے۔ پھر دارالعلوم امجدیہ میں مشائخ رضویہ امجدیہ بحرالعلوم فخر الاسلام علامہ عبدالمصطفی ازہری امجدی فقیہ العصر علامہ مفتی وقار الدین رضوی، حضرت علامہ مفتی محمد ظفر علی نعمانی رضویہ امجدی قدست اسرارہم کے مزارات پر خانقاہ امجدیہ رضویہ حاضر ہوئی، فاتحہ خوانی فرمائی، مولانا محمد اسماعیل شیخ الحدیث امجدیہ نے ملاقات فرمائی۔ یہاں سے سیدھے مجاہد مسلک اعلیٰ حضرت پیر طریقت آبروئے اہلسنت علامہ سید شاہ تراب الحق قادری رضوی اطال اﷲ عمرہ کی عیادت کے لئے ان کے دولت کدہ پر رونق افروز ہوئے۔ بیسیوں علما و محبیجن تھے۔ بحمدہ تعالیٰ پہلے سے بہت اچھے اور صحت مند ہیں، بہت مسرور ہوئے۔ حضرت کراچی میں روح رواں اہلسنت ہیں، ان کے دم قدم کی برکت سے مسلک اعلیٰ حضرت کو فروغ عروج حاصل ہے اور سنیت رضویت کی بہاریں ہیں۔ دونوں بزرگ ایک دوسرے کے لئے دعائیں کرتے رہے۔ مختلف امور پر تبادلہ خیال ہوتا رہا۔ حضرت مولانا قاری ریاض احمد بدایونی اور دیگر علماء بھی ملاقات کے مشتاق تھے۔ آج کا دن بہت مصروف اور تبلیغ سنیت سے بھرپور گزرا۔ گویا کراچی میں مسلک اعلیٰ حضرت کا ابر کرم رحمت بن کر برسا۔ ہر پروگرام میں حضرت علامہ مفتی سید محمد اکبر الحق رضوی اور دیگر متعدد علماء ہمراہ رہے اور استقبالیہ کلمات کا حق ادا کیا۔ اس موقع پر کراچی کے علماء نے اپنی طرف سے شجرہ قادریہ برکاتیہ رضویہ چشتیہ صابریہ اور سند اجازت و خلافت بھی خود چھپوائی تھی۔
24 فروری بروز پیر استاذ العلماء شیخ الحدیث والتفسیر علامہ مفتی محمد احمد صاحب نعیمی کی پرخلوص دعوت پر ان کے عظیم الشان دارالعلوم انوار المجدیہ نعیمیہ غریب آباد ملیر سٹی کھوکھرا پار نمبر 1 کراچی میں علماء کے قافلہ کے ساتھ ضیغم اہلسنت خلیفہ خلفائے اعلیٰ حضرت رئیس التحریر علامہ محمد حسن علی رضوی میلسی وہاں رونق افروز ہوئے تو علاقہ کے علماء و عوام اور طلباء کرام نے شاندار اسقبال کیا۔ حضرت علامہ مفتی محمد احمد نعیمی مجددی سندھی کے اخلاص و مروت و انکساری کا کیا کہنا۔ بایں علم و فضل انتہائی منسکر المزاجی اور عاجزانہ اخلاص کے ساتھ حضرت صمصام المناظرین کو اپنی مسند پر بٹھاتے دست بوستی فرماتے، زبردست مثالی استقبالیہ کا انتظام فرمایا۔ یہاں اساتذہ اور طلباء کو کچھ نصیحتیں اور ہدایتیں فرمائیں اور استاذ اعلماء کو سندیں خلافتیں ان کو عطاء فرمائیں جو حضرت ضیغم اہلسنت کو حضور محدث اعظم پاکستان شہزادہ اعلیٰ حضرت مفتی اعظم بریلوی ملک العلماء خلیفہ اعلیٰ حضرت فاضل بہاری، مفسر اعظم نبیرۂ اعلیٰ حضرت جیلانی میاں وغیرہم قدست اسرارہم سے حاصل ہیں، دعا خیر کے بعد واپسی ہوئی۔
جامع مسجد محمدی آئی ایریا کورنگی کراچی میں ماشاء اﷲ تاریخی جلسہ سے خطاب فرمایا جس سے کثیر و عظیم اجتماع میں لانڈھی اور کورنگی کے سینکڑوں علماء کرام بھی موجود تھے۔ ضیغم اہلسنت قاطع نجدیت سرشکن وہابیت علامہ میلسی صاحب سورہ کوثر کو موضوع سخن بانر اختیارات مصطفی امداد و استعانت حبیب خدا پر فاضلانہ بیان فرمایا اور تقویۃ الایمان انکار باطلہ کا مدلل رد بلیغ فرمایا۔ لمحہ بہ لمحہ مسجد نعروں سے گونجتی رہی۔ بکثرت علماء عوام حاضرین سلسلہ عالیہ قادریہ برکاتیہ رضویہ میں داخل ہوئے۔ دعا کے بعد واپسی ہوئی۔ حضرت علامہ مولانا سید شاہ مظہر الحق صاحب قادری حضرت علامہ مولانا محمد ہارون صاحب، حضرت والد علامہ میلسی کے اعزاز میں پرتکلف ظہرانہ دیا، سارے علاقہ میں مسلک رضا کے ڈنکے بج گئے۔
25 فروری بعد نماز عشاء آفتاب اہلسنت سراپا خلوص و محبت مولانا محمد آفتاب احمد قادری رضوی کی پرخلوص پرجوش دعوت پر ان جامع مسجد بیت المکرم عمار یاسر فیز 2، ملیر میں عظیم الشان جلسہ عید میلاد و گیارہویں شریف میں شرکت فرمائی جس میں سینکڑوں علماء اہلسنت ہزاروںعوام و خواص نے شرکت کی سعادت حاصل کی۔ علامہ مفتی سید اکبر الحق رضوی مولانا علامہ سید عبدالوہاب اکرم قادری، حضرت مولانا ناصر قادری، مولانا قاری غلام نبی سعیدی، مولانا مفتی غلام غوث قادری نے حضرت رئیس التحریر صمصام المناظر میں علامہ میلسی صابر پر جوش بیان عقائد اہل سنت کی حقانیت عظمت و رفعت شان مصطفی اور کرامات سیدنا غوث اعظم حضور اعلیٰ حضرت مقبولیت عامہ محبوبیت تامہ پر پونے دو گھنٹے پر درد وپرسوز بیان فرمایا۔ مجمع جھوم گیا لمحہ بہ لمحہ مسجد نعروں سے گونجتی رہی۔ بعد میں بکثرت عوام و خواص علماء کرام سلسلہ رضویہ میں داخل ہوئے۔
بعد میں ایک مثالی استقبالیہ عشائیہ دیاگیا۔ ضیغم اہلسنت علامہ محمد حسن علی میلسی تقریبا ہر جسلہ میں حضرت تاج الشریۃ علامہ مفتی محمد اختر رضا ازہری علامہ سید شاہ تراب الحق قادری پاسبان مسلک رضا علامہ ابو دائود محمد صادق قادری رضوی اور عوام کے لئے دعائے صحت و عافیت فرماتے رہے۔
26 فروری بروز بدھ حضرت مولانا جناب محمد اظہر خان صاحب قادری کی دعوت پر جامع مسجد اقصٰی اور دارالعلوم اقصیٰ کا افتتاح فرماکر برکت و کامیابی کی دعا فرمائی۔ ولانا مفتی سید محمد اکبر الحق صاحب رضوی، حضرت علامہ مولانا محمد آفتاب قادری مولانا غلام جعفر حسین رضوی، مولانا حافظ محمد اسلم صاحب چشتی ہمراہ تھے۔ یہاں معززین علاقہ کھوکھرا پار اور پرانے بزرگوں کا ہجوم تھا۔ یہ اعلیٰ حضرت قدس سرہ کا فیضان ہے کہ آج ایک صدی کے بعد بھی اعلیٰ حضرت کے غلاموں پر لوگ پروانہ وار نثار ہوتے ہیں۔ یہاں سے حضرت ضیغم اہلسنت سوا بجے کی فلائٹ کے لئے ایئرپورٹ روانہ ہوگئے۔
محمد کامران رضوی ، ملیر کراچی