جماعت اہلسنت نے محکمہ اوقاف کو ختم کرنے کا مطالبہ کردیا

in Articles, Tahaffuz, May 2011, متفرقا ت, مو لا نا شہز ا د قا د ری تر ا بی

جماعت اہلسنت نے محکمہ اوقاف کو ختم کرنے کا مطالبہ کردیا

 

جماعت اہلسنت پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ سید ریاض حسین شاہ نے کہا ہے کہ مزارات بزرگان دین کو سیکورٹی خدشات کی آڑ میں بند کرنے کی سازش ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا۔ چیف جسٹس آف پاکستان مزارات اولیاء اﷲ پرہونے والی دہشت گردی کے خلاف از خود نوٹس لیں اور حقائق کو منظر عام پر لائیں انہوں نے کہا کہ داتا علی ہجویری رحمتہ اﷲ علیہ ،بابا فرید رحمتہ اﷲ علیہ اور حضرت عبداﷲ شاہ غازی رحمتہ اﷲ علیہ کے مزارات میں دہشت گردی کے مرتکب دہشت گردوں اور ان کے سرپرستوں کو حکمراں قوم کے سامنے بے نقاب کرتے تو دربارحضرت سخی سرور رحمتہ اﷲ علیہ میں یہ المناک سانحہ نہ رونما ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ مزارات بزرگان دین میں تواتر کے ساتھ ہونے والی دہشت گردی کے باوجود وفاقی اور صوبائی حکومت اور اس کے ماتحت محکمہ اوقاف کی جانب سے کوئی خاطر خواہ سیکورٹی پلان تشکیل نہیں دیا گیا ہے لہذا جماعت اہلسنت پاکستان حکومت وقت سے مطالبہ کرتی ہے کہ مزارات اولیاء اﷲ کو محکمہ اوقاف کی کنٹرولنگ اتھارٹی سے فی الفور ختم کرے اور مزارات بزرگان دین اور ان سے متصل مساجد کے انتظام کو سنی اوقاف کے حوالے کی اجائے تاکہ اولیاء اﷲ کے چاہنے والے مزارات بزرگان دین کے جملہ انتظامات کے ساتھ ان کی حفاظت بھی کرسکیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ماڈل ٹائون اور اتفاق مسجد میں دربار حضرت سخی سرور رحمتہ اﷲ علیہ میں خودکش حملے اور دہشت گردی کے المناک سانحہ کے جخلاف جمعہ کو احتجاجی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ دریں اثناء احتجاجی اجتماع کی کال پر دربار حضرت سخی سرور رحمتہ اﷲ علیہ میں خودکش حملے کے خلاف ملک گیر یوم احتجاج منایا گیا اور تمام چھوٹے بڑے شہروں میں مظاہرے، ریلیاں اور جلسے منعقد کئے گئے۔