کہیں امریکہ ناراض نہ ہوجائے

in Tahaffuz, June 2010, متفرقا ت

وطن عزیز جن مشکلات سے دوچار ہے‘ اس کے ذمے دار ہمارے حکمرانوں کی غلط پالیسیاں ہیں۔ حکمران مفاد پرست ہوچکے ہیں‘ انہیں ہر طرف دولت ہی دولت نظر آتی ہے۔ ان کا مطمع نظر فقط یہ ہے کہ ہمارے اکائونٹ میں ڈالر کی کثرت ہو اور اس خواہش کو پورا کرنے کے لئے اپنے مائی باپ امریکہ کی رضامندی کے لئے ہر دم کوشاں ہیں۔ ہمارے حکمرانوں کی حالت کچھ یوں ہے۔
ملک میں مہنگائی کا خاتمہ نہ کرنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
قرآن و سنت کا نفاذ نہ کرنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
نظام مصطفیﷺ نافذ نہ کرنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
قانون کی بالادستی قائم نہ ہونے دینا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
حدود آرڈیننس بحال نہ کرنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
توہین رسالت کے قانون میں چھیڑ چھاڑ جاری رکھنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
قادیانیوں اور دیگر لادینی قوتوں کی حمایت نہ چھوڑنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
ایران سے سستی بجلی مت خریدنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
اسرائیل کی مخالفت مت کرنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
پاکستانی قوم کو ان کے حقوق مت دینا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
ملک میں قوم پرستی کی آگ کو بھڑکاتے رہنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
نام نہاد جہادی تنظیمیں جیش محمد‘ لشکر طیبہ‘ جماعۃ الدعوہ‘ سپاہ صحابہ‘ سپاہ محمد‘ تحریک نفاذ شریعت محمدی اور حرکتہ المجاہدین کو جڑ سے ختم مت کرنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا۔
صوفی محمد‘ حکیم اﷲ محسود‘ منگل باغ‘ مولوی فضل اﷲ‘ اظہر مسعود اور حافظ سعید کو لگام مت دینا اور آزاد رکھنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا۔
لوڈشیڈنگ کا خاتمہ مت کرنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
نوجوانوں کو اچھے روزگار کے مواقع نہ دینا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
بینکنگ نظام کے ذریعے گلی گلی سود کو عام کردو اور اسلامی بینکنگ کا خول چڑھا دو‘ ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
فحاشی‘ عریانی‘ ناچ گانا اور شراب کی محفلوں پر پابندی عائد نہ کرنا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
اس قوم کو خوشحال مت ہونے دینا ورنہ امریکہ ناراض ہوجائے گا
ہمارا دشمن امریکہ ہرگز یہ نہیں چاہتا کہ پاکستان اور پاکستانی قوم ترقی کرے۔ امریکہ یہی چاہتا ہے کہ اس قوم کو الجھا کے رکھو‘ اس کو ترقی نہ کرنے دو۔ یہ قوم مسائل میں الجھی رہی تو ہمارے ناپاک عزائم پورے کرنے میں ہم کامیاب ہوجائیں گے۔
یاد رہے کہ آج تک امریکہ نے کبھی پاکستان اور پاکستانی قوم کی دل سے حمایت نہیں کی۔ اس وقت عالم اسلام کا سب سے بڑا دشمن امریکہ ہے مگر حکمران ڈالر کی ہوس میں اندھے ہوچکے ہیں۔ حکمرانوں کو ہر وقت یہی فکر لاحق ہوتی ہے کہ کہیں امریکہ ناراض نہ ہوجائے۔
اے کاش! حکمرانوں کی سوچ بدل جائے اور وہ یہ سوچنا شروع کردے کہ کہیں رب تعالیٰ اور اس کا حبیبﷺ ناراض نہ ہوجائے