بارگاہ رضویت میں ایٹمی سائنسدان ڈاکٹر عبدالقدیرخان کا خراج تحسین

in Tahaffuz, July 2009, ڈاکٹر عبدالقدیرخان, شخصیات

یہ امر باعث مسرت ہے کہ ’’ادارہ تحقیقات امام احمد رضا‘‘ حسب سابق امسال بھی برصغیر پاک و ہند کے بلند پایہ دینی رہنما اور مفکر اسلام جناب امام احمد رضا خاں بریلوی علیہ الرحمہ کے یوم وصال پر کانفرنس کا اہتمام کررہا ہے جس میں عالم اسلام کے اسکالرز‘ علماء اور مفکرین ان کی زندگی اور تعلیمات پر روشنی ڈالیں گے۔
آج سے سو سال قبل جب انگریز ہندوئوں کے ساتھ سازباز کرکے ہند کی معیشت پر قابض ہوئے تو مسلمانوں کے تشخص اور تعلیمی نظام کو زبردست دھچکا لگا۔ استعماری طاقتوں کے مذموم عزائم کی بدولت مذہبی قدریں زوال پذیر ہونے لگی تھیں۔ اس پرآشوب دور میں اﷲ رب العزت نے برصغیر کے مسلمانوں کو امام احمد رضا جیسی باصلاحیت اور مدبرانہ قیادت سے نوازا کہ جس کی تصانیف‘ تالیفات اور تبلیغی کاوشوں نے شکست خوردہ قوم میں ایک فکری انقلاب بپا کردیا۔ امام صاحب کی شخصیت جذبہ عشق رسول سے لبریز تھی۔ آپ کی ساری زندگی کو مدنظر رکھتے ہوئے یہ بات وثوق سے کہی جاسکتی ہے کہ آپ کی ذات نبی کریم سے وفا شعاری کا نشان مجسم تھی۔ آپ کی ہمہ جہت شخصیت کا ایک اہم پہلو سائنس سے شناسائی بھی ہے۔ سورج کو حرکت پذیر اور محو گردش ثابت کرنے کے ضمن میں آپ کے دلائل بڑی اہمیت کے حامل ہیں۔ آج جبکہ ہمارا معاشرہ فروعی‘ لسانی اور نام نہاد جدید فرقوں کے گروہوں میں منقسم نظر آتا ہے جبکہ دوسری طرف ہمارا دشمن ہمیں تباہ و برباد کرنے کی گھات میں بیٹھا ہے تو میں سمجھتا ہوں امام صاحب کی تعلیمات سے بہرہ ور ہوکر ہم آج بھی ایک سیسہ پلائی ہوئی دیوار بن سکتے ہیں۔
مجھے امید ہے کہ آپ کا ادارہ امام احمدرضا بریلوی کی تعلیمات کو عام کرتے وقت ملی‘ یکجہتی اور مذہبی رواداری کے جذبے کو بھی فروغ دے گا تاکہ ملک عزیز میں قومی اتحاد اور ہم آہنگی کی فضا قائم ہو۔
میں امام احمد رضا کانفرنس کے انعقاد پر ادارہ کے اراکین کو مبارکباد پیش کرتا ہوں اور اس کی کامیابی کے لئے دعاگو ہوں۔